پاکستان کے کسی سینما گھر میں بھارتی فلم نہیں دکھائی جائے گی

پاکستان کے اطلاعات اور نشریات کے بارے میں وزیراعظم کی معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان نے اپنی ایک ٹوئٹ میں کہا ہے کہ ملک کے کسی بھی سینما گھر میں بھارتی فلمیں نہیں دکھائی جائینگی، بھارتی ڈرامے، فلمیں اور اس طرح کا مواد پاکستان میں نشر کرنے پر مکلم طور پر پابندی ہوگی۔

پاکستان کے اطلاعات اور نشریات کے بارے میں وزیراعظم کی معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ ہم کشمیریوں کے جذبات کو سمجھتے ہیں اور ہر وہ اقدام کریںگے جس سے ان کا جذبہ بڑھے۔

پاکستانی سینیما گھروں میں پہلے سے ہی تمام تر بھارتی مواد پر پابندی ہے تاہم کشمیر کےموجودہ معاملے کے بعد حکومت ایک بار پھر یہ اعلان کیا ہے کہ پاکستانی سینما گھروں میں بھارتی فلمیں نہیں دکھائی جائینگی۔

رواں برس فروری میں سابق وزیر اطلاعات چوہدری فواد حسین نے یہ اعلان کیا تھا کہ سینیما ایسوسی ایشن نے بھارتی فلموں کی نمائش پر پابندی عائد کردی ہے جبکہ پیمرا کو ہدایت کی ہے کہ ٹی وی چینلوں پر بھارتی اشتہارات کو مکمل طور پر روکا جائیں۔

پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ بھارت کیساتھ ہر قسم کے ثقافتی تعلقات کو مکمل طور پر ختم کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں